راول ڈیم میں مچھلیوں کی ہلاکت کا معاملہ، ملوث افراد کے خلاف سخت قانونی کاروائی ہوگی۔ وائس چئیرمین واسا ضیا اللہ شاہ

62

راولپنڈی 16۔ جولائی (اے پی پی): وائس چیئرمین واسا راولپنڈی ضیاء اللہ شاہ نے کہا ہے کہ راول ڈیم میں مچھلیوں کی ہلاکت کے واقعہ کی مکمل چھان بین کی جا رہی ہے جو کوئی بھی اس میں ملوث پایا گیا اس کے خلاف سخت قانونی کاروائی عمل میں لائی جائے گی۔ چار مستند اداروں کی طرف سے راول ڈیم کے پانی کے نمونوں کے تجزیئے اور پانی کو انسانی استعمال کے قابل قرار دیئے جانے کے بعد گذشتہ رات بارہ بجے سے راولپنڈی کے لئے پانی کی سپلائی بحال کر دی گئی ہے۔ اتوار کو راول ڈیم میں ایک ہزار مچھلیوں کی لاگت کے واقعہ کے بارے میں تفصیلات سے آگاہ کرتے ہوئے انہوں نے کہاکہ واسا کے ماہرین اور دیگر متعلقہ اداروں کے حکام کے ہمراہ اس واقعے کا ہر پہلو سے جائزہ لیا جا رہا ہے اور اس امکان کو بھی مد نظر رکھا جا رہا ہے کہ کہیں مچھلیوں کی ہلاکت کی وجہ آکسیجن کی کمی تو نہیں، تاہم اس مقامی ٹھیکیدار کی ملی بھگت یا کسی اور وجہ سے راول ڈیم کے پانی کو آلودہ کرنے یا اس میں کسی بھی شے کی آمیزش کی بھی تفصیلی تحقیقات کی جا رہی ہیں او ر جو کوئی بھی اس میں ملوث پایا گیا اسے قرار واقعی سزا کا سامنا کرنا پڑے گا۔ ضیاء اللہ شاہ نے کہاکہ راول ڈیم محکمہ آبپاشی کے زیر انتظام ہے اور ڈیم سے پانی کے نمونے پاکستان کونسل آف ریسرچ واٹرریسوسز، واٹر ٹیسٹنگ لیبارٹری پبلک ہیلتھ انجینئرنگ ڈیپارٹمنٹ، پاک انوائرمنٹل پروٹیکشن ایجنسی اور واسا لیبارٹری سے چیک کرائے گئے ہیں اور اس کے بعد پانی کی سپلائی بحال کی گئی ہے۔ ضیاء اللہ شاہ نے کہاکہ واسا کے ایم ڈی راجہ شوکت محمود اور تمام افسران و انجینئرز اس واقعہ کے بعد سے متحرک رہے ہیں اور ایک لمحے کی بھی کوتاہی نہیں برتی گئی اور واقعہ کی تحقیقات جلد از جلد مکمل کرنے میں کوئی کسر اٹھا نہیں رکھی جائے گی۔ اے پی ہی حمزہ