خرم شیر زمان کی پریس کانفرنس

35

کراچی۔ 8 نومبر (اے پی پی) پاکستان تحریک انصاف کراچی ڈویژن کے صدر و رکن سندھ اسمبلی خرم شیر زمان نے کہا ہے کہ ناجائز تجاوزات کے خلاف آپریشن میں سپریم کورٹ کے احکامات کی آڑ میں میئر کراچی اپنا کوئی غصہ اتار رہے۔ یہ بات انہوں نے جمعرات کو پارٹی سیکرٹریٹ انصاف ہاﺅس کراچی میں ہنگامی پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہی۔ اس موقع پر جنرل سیکریٹری اشرف قریشی، سیکریٹری اطلاعات عادل انصاری، ایم پی اے جمال صدیقی اور نواز مندوخیل بھی موجود تھے۔ انہوں نے کہا کہ ناجائز تجاوزات ختم کر کے عوام کو سہولت دینا مقصود تھا۔ انہوں نے الزام عائد کیا کہ صدر کے علاقے میں ناجائز تجاوزات کے خلاف آپریشن میں دکانوں پر لگے ہوئے سائن بورڈز توڑے گئے، دکانوں کے شٹر توڑ کر لوگوں کو نقصان پہنچایا گیا۔ انہوں نے کہا کہ میئر کراچی سے جب اس حوالے سے پوچھا گیا کہ آپ ان دکانداروں سے پچھلے کئی برسوں سے ان سائن بورڈز کا ٹیکس لے رہے ہیں، لیکن مجھے اس کا کوئی جواب نہیں ملا۔ انہوں نے کہا کہ تجاوزارت کے خاتمے کے حوالے سے سپریم کورٹ کے حکم پر عمل درآمد کے لئے عدالتی ناظر مقرر کیا جائے تاکہ عدالت عظمیٰ کا نام استعمال کر کے تاجر برادری کا نقصان نہ کیا جا سکے۔ بعد ازاں میئر کراچی وسیم اختر نے ایمپریس مارکیٹ صدر میں تجاوزات کے خلاف آپریشن کا جائزہ لینے کے بعد صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ انسداد تجاوزات آپریشن کے خلاف دھرنا غیرقانونی ہے، ہم کسی کا روزگار نہیں چھیننا چاہتے، لیکن عدالتی حکم پرمن وعن عمل کریں گے، مزاحمت کرنے والوں کے خلاف ایکشن ہوگا۔ وسیم اخترنے کہا کہ متعلقہ ادارے مل کر تجاوزات کے خاتمے کے لئے کام کر رہے ہیں، آپریشن کے خلاف کسی قسم کا دباﺅ قبول نہیں کریں گے اور کسی غریب کو نقصان نہیں پہنچے گا جبکہ لینڈ اور قبضہ مافیا کے خلاف آپریشن جاری رہے گا۔