وزیر اعلی سندھ سید مراد علی شاہ سکھر بیراج کے دورے کے موقع پر میڈیا سے بات چیت

38

ٍ

سکھر۔ 8نومبر(اے پی پی) وزیر اعلی سندھ سید مراد علی شاہ سکھر بیراج کے دورے کے موقع پر میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ پانی کی کمی ارسا کے مطابق 38 فیصد ہے، ڈیرھ ماہ میں مزید اضافہ ہوا، تونسہ سے لیکر گڈو بیراج تک نارمل سے زیادہ لاسز ہورہے ہیں، تحقیقات کی ہدایت کی ہے، بیراج کی کینالوں پونڈ لیول بڑھانے میں مسئلہ ہے، انہوں نے مزید کہا کہ اگر ہم زیادہ بڑھائیں گے تو جنوری و فروری میں مزید مشکلات ہوگی، ہماری ضرورت ہے کہ ان کینال کو جائز حق دیا جایے، مجھے خدشات ہے کہ پلان پورے نہ ہوسکیں، پانی کی قلت زیادہ ہے، کوشش کرینگے کہ کامیابی ملے، پانی کی آمد کتنی ہے تاکہ ذخائر بناسکے اور ان ذخائر پر ہمارے تحفظات دور کئے جائیں، قدرتی طور پر پانی کی قلت ہے، ہم نے ارسا کو صوبوں کا حسہ دینے کی بات کرنی ہے، فروری میں برسات نہ ہوئی تو مسئلہ مزید سنگین ہوجائیگا۔میڈیا سے بات چیت سے پہلے وزیر اعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ نے سکھر بیراج دورے کے دوران محکمہ آبپاشی اور چیف انجینئر سکھر بیراج سے پانی کی صورتحال پر بریفنگ لی، اس موقع پر صوبائی وزراءسید ناصر حسین شاہ ، سید اویس قادر شاہ ، رکن سندھ اسمبلی سید فرخ شاہ سمیت محکمہ آبپاشی کے افسران بھی موجود تھے۔ بریفنگ میں چارٹس نقشوں کی مدد سے وزیر اعلی سندھ کو پانی کی آمد و اخراج اور دیگر صورتحال کے حوالے سے آگاہ کیا گیا، وزیر اعلی سندھ نے دوران بریفنگ آبپاشی حکام سے سوالات بھی کیے اوردریائے سندھ میں پانی کی صورتحال، پانی کی متوقع آمد و کمی ، کے حوالے سے معلومات حاصل کیں۔