وزیراعلیٰ بلوچستان کی زیرصدارت صوبائی کابینہ کا اجلاس

60

کوئٹہ 11 دسمبر (اے پی پی ) وزیراعلیٰ بلوچستان جام کمال کی زیرصدارت صوبائی کابینہ کا  اجلاس منعقد ہوا ،اجلاس میں فیصلہ کیا گیا کہ  سی پیک کی جوائنٹ کوآرڈینیشن کمیٹی کے چین میں منعقد ہونے والے اجلاس کی تیاری کے لئے اسلام آبادمیں منعقد ہونے والے جوائنٹ ورکنگ گروپ کے اجلاس میں مغربی روٹ کے منصوبے شامل کرنے کے لئے مضبوط موقف اپنایا جائے گا اور سی پیک میں صوبے کی سماجی ترقی کے لئے نئے منصوبے پیش کئے جائیں گے ۔

 اجلاس  میں  کابینہ کو سی پیک میں شامل بلوچستان کے منصوبوںاور جوائنٹ کوآرڈینشن کمیٹی کے اس ماہ منعقد ہونے والے آٹھویں اجلاس کے ایجنڈے میں شامل بلوچستان کے منصوبوں کے بارے میں بریفنگ دی گئی، صوبائی کابینہ نے فیصلہ کیا بلوچستان کے جغرافیائی محل وقوع، وسیع وعریض اراضی اور معدنی وسائل سے بھرپور فائدہ اٹھایا جائے گا، کابینہ کا موقف تھا کہ اگر معدنیات، خوراک، لائیواسٹاک، سیاحت، ماہی گیری اور زراعت کے شعبوں کی ترقی کے منصوبے سی پیک میں شامل ہوں گے تو عام آدمی کی معاشی حالت بہتر ہوسکے گی۔

کابینہ نے اس امر سے اتفاق کیا کہ جوائنٹ ورکنگ گروپ میں بلوچستان کے موقف کو تسلیم کئے جانے کی صورت میں صوبائی حکومت جوائنٹ کوآرڈینیشن کمیٹی کے اجلاس میں شرکت کرے گی جبکہ  کابینہ کی جانب سے  گوادر میں 300میگاواٹ پاور پلانٹ کے لئے مطلوبہ اراضی خریدنے کی اجازت اور اراضی چینی کمپنی کو لیز پر دینے کے لئے معاہدہ کرنے کی منظوری بھی دی گئی ۔ اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے وزیراعلیٰ بلوچستان جام کمال کہا کہ سی پیک کے فریم ورک میں شامل پٹ فیڈر سے کوئٹہ کو پانی کی فراہمی اور کوئٹہ ماس ٹرانزٹ ٹرین کے منصوبوں کے متبادل منصوبوں کا جائزہ لیا جائے ۔

اے پی پی / محمد بلال اعوان / شاہ زیب

وی این ایس کوئٹہ