ایوان بالا کی قائمہ کمیٹی برائے قانون وانصاف کا اجلاس،محرک بل کی عدم شرکت پر چیئرمین برہم

40

اسلام آباد 12(اے پی پی):سینیٹر محمد جاوید عباسی نے کہا کہ بہت سے بل التواء کا شکا ر ہو رہے ہیں جس کی بنیادی وجہ محرک بل کی کمیٹی اجلاس میں عدم شرکت ہے ۔ ایک اصول بنایا جائے اور محرک بل کو صرف ایک دفعہ موخر کرنے کی اجازت دی جائے ۔
پارلیمنٹ ہاؤس میں ایوان بالاء کی قائمہ کمیٹی برائے قانون و انصاف  کے اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے  چیئرمین کمیٹی سینیٹر محمد جاوید عباسی نے کہا کہ وزارتوں کے اعلیٰ حکام سرکاری امور چھوڑ کر قائمہ کمیٹیوں میں بریف کیلئے آتے ہیں اور محرک بل نہ ہونے کی وجہ سے معاملے کوموخر کرنا پڑتا ہے ۔جب بھی آئینی ترمیم کی ضرورت ہو تو اس کا تفصیل سے جائزہ لے کر فیصلہ کرنا چاہیے اور اس حوالے سے ہمارا فرض بنتا ہے ملکی مفاد کو ملحوظ خاظر رکھا جائے ۔
قائمہ کمیٹی کے اجلاس میں وراثتی سریٹفکیٹ کے حصول میں درپیش مسائل ، لیٹرز آف ایڈمنسٹریشن اینڈ سکسیشن سریٹفکیٹ ایکٹ 2018 ، انسانی اعضاء کی پیوند کاری کے ترمیمی بل2018 ،سینیٹر زسراج الحق اور مشتاق احمد کے آئینی بل 2018 کے آرٹیکل 30 کی شق2 کو ختم کرنے ، سینیٹر محمد علی سیف کے آئینی ترمیمی 2018 ،سول ریوژنز بل2018 کے علاوہ محمد عتیق رفیق کی عوامی عرضداشت کے معاملات کابھی  تفصیل سے جائزہ لیا گیا ۔

اے پی پی /سحر/طاہرمحموداعوان

وی این ایس، اسلام آباد