بچوں کے تحفظ میں والدین اور اساتذہ کا کردار مزید بہتر ہونا چاہئے: ڈاکٹر شیریں مزاری

20

اسلام آباد،12 فروری (اے پی پی): وفاقی وزیر انسانی حقوق ڈاکٹر شیریں مزاری نے اساتذہ اور والدین پر زور دیا ہے کہ وہ بچوں میں تشدد اور زیادتی سے بچنے کے لئے آگاہی پیدا کریں اور آنے والی نسل کو محفوظ رکھنے میں اپنا کردار اداکریں۔ انہوںنے کہا کہ بچوں کے تحفظ کے لئے ملک میں قوانین موجود ہیں تاہم ان قوانین کا بھرپور فائدہ اٹھانے کے لئے موثر آگاہی کی ضرورت ہے۔
تشدد اور ذیادتی کی روک تھام کی مہم کا آغاز کرتے ہوئے مقامی سکول میںمنعقدہ تقریب سے خطاب میں وفاقی وزیر انسانی حقوق نے کہا کہ بچوں کو تشدد اور زیادتی سے روکنے میں والدین کے ساتھ ان کے اساتذہ اور والدین کا کردار بہت اہم ہے۔ بچوں کی تحفظ کا قانون موجود ہے۔ تاہم ان قوانین سے فائدہ اٹھانے کے لئے آگاہی کی ضرورت ہے۔ہم چاہتے ہیں کہ ہمارے بچے پہلے اپنی حفاظت خود کریں ان کو پتہ ہونا چاہیے کہ کیا ٹھیک اور کیا غلط ہے۔ ہمارا قانون اور آئین بھی بچوں کے حقوق کی حفاظت کا کہتا ہے۔ وزیرانسانی حقوق اس موقع پر بچوں اور اساتذہ کے ساتھ گھل مل گئیں۔
اس موقع پر بچوں پر تشدد اور زیادتی کی روک تھام کے حوا لے سے آگاہی وڈیوز دکھائی گئیں جن میں بتایا گیا کہ بچوں پر جسمانی تشدد گھر سے ہی شروع ہوتا ہے۔ یہ قریبی رشتہ دار بھی ہوسکتے ہیں۔انکل انٹی بھی ایسا کر سکتے ہیں۔ پاکستان مین بچوں پر تشدد بڑھتاجا رہا ہے۔ ہمیں اس کو روکنا ہے۔اپ کے گھر میں سکول گلی محلہ میں بھی بچوں کے ساتھ ایسا ہو سکتا ہے۔بچوں کا اس حوالے سے اپنے والدین کو بتا ناشرم کی بات نہیں ہے۔

اے پی پی /احسان/حامد

وی این ایس اسلام آباد