سندھ انڈسٹریل لائژن کمیٹی کا اجلاس،گیس کی حالیہ کمی پر تفصیلی تبادلہ خیال

31

کراچی،فروری 11(اے پی پی ): گورنرسندھ عمران اسماعیل اور وفاقی وزیر برائے پاور عمر ایوب خان کی زیر صدارت سندھ انڈسٹریل لائژن کمیٹی کا اجلاس ہوا،اجلاس میں گیس کی حالیہ کمی اور اس کی وجوہات کے بارے میں تفصیلی تبادلہ خیال کیا گیا۔

گورنر سندھ عمران اسماعیل کا کہنا تھا کہ کاروباری سرگرمیوں کے مزید فروغ میں انڈسٹریل لائژن کمیٹی اہم کردار ادا کررہی ہے۔ مسائل کے حل کے لئے وفاقی، صوبائی اور بلدیاتی اداروں کے مابین قریبی روابط نہایت ضروری ہے۔ شہر سے اسٹریٹ کرائمز کے خاتمہ کے لئے بھی موثر اقدامات کئے جارہے ہیں ۔گیس کا حالیہ بحران عارضی ہے جسے جلد حل کرلیا جائے گا۔صنعتوں کو گیس کی فراہمی میں کمی گھریلوں صارفین کو گیس کی فراہمی یقینی بنانے کی وجہ سے ہو ئی کراچی کے چند علاقوں میں جزوی طورپر کچھ پریشانی کا سامنا کرنا پڑا۔ہمیں دشورای کا اندازہ ہے، مستقبل میں ایسی صورتحال سے مزید بہتر انداز سے نمٹا جائے گا۔

وفاقی وزیر عمر ایوب نے کہا کہ 55000 میگا واٹ بجلی پیداکرنے کا ہدف2030 تک رکھا گیا ہے جس میں 30 فیصد انرجی متبادل توانائی ہوگی اس وقت60 فیصد فرنس آئل ،6 فیصد نیوکلیئر ،4 فیصد متبادل توانائی اور 30 فیصد ہائیڈل سے پیدا کررہے ہیں ۔متبادل توانائی 4 فیصد سے بڑھا کر 20 فیصد کرنے کی کوششیں کررہے ہیں جس میں سولر ، ونڈ ، تھر کول اور اسمال ہائیڈل سے توانائی کا حصول یقینی بنائیں گے ،اجلاس میں شرکانے اپنے مسائل سے بھی گورنرسندھ اور وفاقی وزیرکو آگاہ کیا۔

اجلاس میں سوئی سدرن گیس کمپنی ، کے الیکٹرک اور کراچی کے مختلف زون کی انڈسٹریل ایسویسی ایشنز کے عہدیداروں اور چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹریز کے صدر سمیت دیگر شریک تھے۔

اے پی پی /کراچی/حامد

وی این ایس ، کراچی