سینیٹ کمیٹی براۓ پاور میں مہمند ڈیم پر بحث

0
43

اسلام آباد،11 فروری (اے پی پی): چیئرمین واپڈا مزمل حسین نےمہمند ڈیم پراجیکٹ پر  تفصیلی بریفنگ میں بتایا کہ چارسدہ، مردان میں جو فلڈ فیکٹر ہے وہ کور ہوگا. یہ ڈیم 800 میگا واٹ بجلی پیدا کرے گا. جبکہ اگلے500 سالوں کے لیے پشاور کو پانی کا مسئلہ نہیں ہو گا۔

چیئرمین واپڈانے کہا کہ کے پی کے کی عوام نے کھلے دل سے پراجیکٹ کی تکمیل میں ہر طرح کی سپورٹ کا اعادہ کیا اورکچھ لوگوں نے زمین کا معاوضہ بھی لینے سے انکار کیا۔

چیئرمین واپڈانے نے بتایا کہ23 نومبر 2017 کو بڈ اوپن ہوئی، اوپن   کمپیٹیٹو بڈنگ اور سنگل بڈنگ دو طرح کی بڈنگ ہوتی ہے.جس میں پیپرا رولز پراسس کو فالو کیا گیا ہے۔

سینٹر احمد خان نے کہا کہ کلائنٹ  بڈنگ کے دوران  نیگوسیشن کر سکتا ہے جیسے چائنہ گدوبا کمپنی، جس پر چیئرمین واپڈا نے کہا کہ ہم پہلے ہی اسی سٹیج پر فنکشنل ہیں۔30 سال سے ویسٹرن کمپنییو‌ں سے ایگریمنٹس نہیں ہو رہے اور اسی وجہ سے ہم نے چاینیز کمپنیوں کو اون بورڈ لیا ہے۔

 چیئرمین واپڈنے بتایا کہ 4بلین مہمند پراجیکٹ پر خرچ کیے جائینگے اور6000 ہزار لوکل لوگ مہمند   ڈیم پر11000ہزار  لوکل لوگ دیامیر ڈیم پر کام کریں گے۔

اے پی پی/سحر/نورین

وی این ایس اسلام آباد