پشاور؛ حکام کی عدم توجہ کے باعث دلہ زاک میں مغل دور کا تاریخی گنبد خستہ حالی کا شکار

66

 

پشاور،12فروری(اے پی پی ): دلہ زاک روڈ پر گنبد گائوں میں واقع مغل دور کا بنا ہوا ہوا تاریخی گنبد حکام کی عدم توجہ کی وجہ سے اپنی اصلیت کھو رہا ہے۔ یہ گنبد اکبر بادشاہ کے دور میں شاہ قطب زین العابدین نے بنا یا تھا جو ایک بزرگ صوفی کا مزار تھا۔ یہ گنبد باریک اینٹوں سے بنا ہوا ہے جس کے ساتھ اوپر منزل کو چڑھنے کیلئے سیڑھیاں بھی بنائی گئی ہیں،گنبد کے اوپر ایک درخت بھی اگا ہوا ہے  جوتقریباً پانچ سال کا ہے۔

پشاور یونیورسٹی کے باٹنی ڈیپارٹمنٹ کے سابق چئیرمین پروفیسر ڈاکٹر عبد الرشید نے اے پی پی  کو بتایا کہ یہ درخت اس تاریحی گنبد کی وجود کیلئے نہایت حطرناک ہے اور اس کی جڑیں اس گنبد کے بالائی حصے کو کسی بھی وقت گرا سکتی ہیں

پشاور یونیورسٹی کے باٹنی کے پروفیسر ڈاکٹر لال بادشاہ نے کہا کہ اس درخت کی جڑوں سے جو کیمیاوی مواد نکلتاہے وہ اس گنبد کی عمارت کیلئے نہایت خطرناک ہے اور اسے بہت نقصان پہنچا سکتا ہے۔

مقامی لوگوں  نے کہا کہ  ہمارا گائوں اس گنبد کی وجہ سے مشہور ہے مگر عملہ کے لوگ تنخواہیں تو لیتے ہیں مگر اپنی ڈیوٹی نہیں کرتے

مقامی لوگوں نے حکومت سے مطالبہ کیا کہ اس گنبد پر مامور تمام عملہ اور اس کے نام پر  جاری  فنڈ کے بابت تحقیقات کی  جائیں

اے پی پی /گل حماد /حامد

وی این ایس  چترال