زیر التواء مقدمات میں کمی لانے اور عوام کی سہولت کیلئے دوردرازعلاقوں میں نئے عدالتی بنچ بنانے کی ضرورت ہے:چیئرمین سینیٹ محمد صادق سنجرانی

9

اسلام آباد 15مارچ (اے پی پی ): چیئرمین سینیٹ محمد صادق سنجرانی نے کہا کہ ایوان بالاء عدالتی نظام میں اصلاحات اورصوبوں کے دور دراز علاقوں میں ہائیکورٹ کے بنچوں کے قیام کیلئے ضروری قانون سازی کرے گا۔ زیر التواء مقدمات میں کمی لانے اور عوام کی سہولت کیلئے دوردرازعلاقوں میں نئے عدالتی بنچ ناگزیر ہیں۔

انہوں نے ان خیالات کا اظہار سرگودھا ، میانوالی اور خوشاب بار ایسوسی ایشنز کے نمائندہ وفد سے پارلیمنٹ ہاؤس میں گفتگو کرتے ہوئے کیا ۔ وفد سے ملاقات کے دوران سینیٹر ڈاکٹر غوث محمد نیازی بھی موجود تھے ۔

محمد صادق سنجرانی نے کہا کہ صوبائی درالحکومتوں سے دور دراز علاقوں میں ہائیکورٹ کے بنچ نہ ہونے کے باعث عوام کو شدید مشکلات کا سامنا ہے ۔ ہائیکورٹ کے موجود بنچ مقدمات کی تعداد میں بہت زیادہ اضافہ کی وجہ مسائل کا شکار ہیں ۔انہوں نے کہاکہ مقدمات کے التواء کی بڑی وجہ ججز اور بنچوں کی کمی ہے ۔ چیئرمین سینیٹ نے کہا کہ سینیٹ کی قائمہ کمیٹی برائے قانو ن و انصاف اور دیگر متعلقہ ادارے اس سلسلے میں مختلف اقدامات اٹھا رہے ہیں جس سے نہ صرف عدالتی نظام کو مزید موثر بنانے میں مددملے گی بلکہ انصاف کی فوری فراہمی میں بھی معاونت حاصل ہوگی ۔انہوں نے کہا کہ ہاؤس اور فیڈریشن کا بنیادی مقصد صوبائی اکائیوں کی عوام کو ہر ممکن سہولیات فراہم کرنے کیلئے قانون سازی اور اقدامات تجویز کرنا ہے ۔

وفد نے چیئرمین سینیٹ کو بتایا کہ سرگودھا ڈویژن میں ہائیکورٹ کا بنچ نہ ہونے کی وجہ سے عوام کو شدید مشکلات کا سامنا ہے ۔یہی وجہ ہے کہ متعلقہ بار ایسوسی ایشنز اس مسئلے کے حل کیلئے مستقل بنیادوں پر ہڑتالیں کر رہی ہے ۔چیئرمین سینیٹ نے بار ایسوسی ایشنز کو مسائل کے حل کیلئے ہر ممکن تعاون کی یقین دہانی کرائی ۔

سورس:وی این ایس ، اسلام آباد