پاکستان اقتصادی تعاون تنظیم کی بھرپور حمایت جاری رکھے گا، مخدوم خسرو بختیار

15

اسلام آباد، 15 مارچ (اے پی پی) : وفاقی وزیر برائے منصوبہ بندی مخدوم خسرو بختیار نے  کہا ہے کہ پاکستان اقتصادی تعاون تنظیم کی بھرپور حمایت جاری رکھے گا۔ پاکستان جغرافیائی اعتبار سے اہمیت کا حامل ملک ہے اور ہم چاہتے ہیں کہ ہماری جغرافیائی اہمیت سے پورے خطے کو فائدہ حاصل ہو خاص طور پر ان ممالک کو کہ جن کو تجارتی مقاصد کے لیے دوسرے ممالک کی گزر گاہوں کو استعمال کرنا پڑتا ہے جیسا کہ افغانستان اور دیگر ممالک  جو کہ گزر گاہوں کے لیے دوسرے ممالک پر انحصار کرتے ہیں۔

وزارت منصوبہ بندی کے زیر اہتمام ایک سیمینار سے خطاب کرتے ہوئے  ان کا کہنا تھا  کہ مختلف ممالک اور خطوں کو آپس میں ملانے سے خوشحالی آئے گی اور انفراسٹرکچر کی بہتری سے ہی تجارت میں اضافہ ہو گا۔ انہوں  نے بتایا کہ  سی پیک معاہدے سے پورے خطے کو فائدہ حاصل ہو گا اور اس منصوبے سے خطے کے لوگوں کے لیے نئی راہیں کھلیں گی۔

 وفاقی وزیر نے اقتصادی تعاون تنظیم کے مشترکہ بینک کے کردار پر بھی  زور دیا ۔انہوں نے کہا کہ ممبر ممالک کو مل کر خطے کی بہتری کے لئے سرمایہ کاری کرنا ہوگی۔ اقتصادی تعاون تنظیم کے ممبر ممالک پوری دنیا کی تجارت میں 2 فیصد حصہ رکھتے ہیں جس میں اضافے کی ضرورت ہے۔

تقریب سے خطاب کرتے ہوئے مہمان خصوصی ،اقتصادی تعاون تنظیم کے سیکرٹری جنرل ڈاکٹر ہادی سلمان پور کا کہنا تھا کہ  وزیراعظم عمران خان خطے کے مسائل جانتے ہیں اور ان مسائل کو حل کرنے کی بھرپور صلاحیت  بھی رکھتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ اقتصادی تعاون تنظیم کو تجارت، ٹرانسپورٹ، توانائی اور دیگر شعبوں میں سرمایہ کاری بڑھانے کی ضرورت ہے۔ انہوں نے بتایا  کہ  اس تنظیم کے ثمرات سے پورے خطے کی عوام کو فائدہ ملنا چاہیے کیونکہ یہ تنظیم خطے سمیت دنیا کو درپیش مشکلات کو حل کرنے کی صلاحیت رکھتی ہے۔ڈاکٹر ہادی کا مزید کہنا تھا کہ اقتصادی تعاون تنظیم کے بینک کے ممبر ممالک کو تجارت کے فروغ کے لئے کام کرنا ہوگا اور اس کے علاوہ سرمایہ کاری کے فروغ کے لئے بھی اپنا کردار ادا کرنا ہوگا ۔

تقریب کا مقصد اقتصادی تعاون تنظیم کو درپیش چیلنجز اور تنظیم کو حاصل ہونے والی کامیابیوں، مستقبل کے لائحہ عمل سے متعلق  اظہار خیال کرنا تھا۔

سورس : وی این ایس، اسلام آباد