سینیٹ قائمہ کمیٹی قومی تحفظ خوراک او رتحقیق

0
312

اسلام آباد، 13 فروری (اے پی پی ): سینیٹ قائمہ کمیٹی قومی تحفظ خوراک او رتحقیق نے زرعی ترقیاتی بنک کو فنڈز فراہم کرنے کی وفاقی حکومت سے سفارش کردی اور وزارت قومی تحفظ خوارک میں زیتون کے پودوں کی ایمپورٹ کے منصوبوں میں کرپشن کے معاملات کے حوالے سے پیش رفت سے آگاہ کرنے کیلئے ڈائریکٹرجنرل ایف آئی اے کو آئندہ اجلاس میں طلب کر لیا۔

قائمہ کمیٹی کا اجلاس چیئرمین کمیٹی سید مظفر حسین شاہ کی صدارت میں پارلیمنٹ ہاوس س میں منعقد ہوا¿  چیئرمین پاکستان زرعی تحقیق کونسل (پی اے آر سی ) نے قائمہ کمیٹی کو بتایا کہ زیتون کے پودوں کی ایمپورٹ کے دو منصوبہ جات پی ایس ڈی پی اور پی آئی ڈی ایس اے میں شامل تھے۔دونوں منصوبوں کیلئے ایک ہی ٹیم تھی اور یہ منصوبے وفاق اور صوبوں کیلئے تھے۔

 

چیئرمین کمیٹی کے سوال کے جواب میں بتایا گیا کہ وزارت نے ان چیزوں کا کوئی نوٹس نہیں لیا تھا۔ ایف آئی اے نے کرپشن کی انکوائری کی ہے اور کچھ افسران کو گرفتار بھی کیا ہے۔ قائمہ کمیٹی نے متفقہ طور پر فیصلہ کیا کہ آئندہ اجلاس میں ڈائریکٹر جنرل ایف آئی اے کمیٹی کو معاملات کے بارے میں تفصیل سے آگاہ کریں۔ قائمہ کمیٹی کو سندھ میں گندم کی خریداری کیلئے پاسکو کے نئے سینٹر کے حوالے سے بتایا گیا کہ انتظامات مکمل ہو چکے ہیں۔ اپریل کے پہلے ہفتے پاسکو سینٹر خریداری شروع کر دیں گے۔

 

چیئرمین قائمہ کمیٹی نے ملک میں زراعت کے حوالے سے تقسیم کیے گئے زون میں تبدیلی کے حوالے سے تشویش کااظہا ر کرتے ہوئے کہا کہ ملک کی موسمی لحاظ سے تقسیم کی گئی زون میں تبدیلی مسائل پیدا کر سکتی ہے۔

قائمہ کمیٹی کے آج کے اجلاس میں سینیٹرز محمد محسن خان لغاری، حمزہ ،ہری رام اور محمد اعظم خان سواتی کے علاوہ سیکرٹری قومی تحفظ خوراک ، چیئرمین پی اے آر سی ، ایم ڈی پاسکو، حکام زرعی ترقیاتی بنک و دیگر اعلیٰ حکام نے شرکت کی۔

اے پی پی/سعدیہ/VNS  اسلام آباد