سینیٹ قائمہ کمیٹی برائے خزانہ کا اجلاس

0
174

 


اسلام آباد ، اپریل (اے پی پی ): سینیٹ قائمہ کمیٹی برائے خزانہ کا اجلاس چیئرمین کمیٹی سلیم مانڈوی والا کی صدارت میں پارلیمنٹ ہاﺅس میں منعقد ہوا۔ قائمہ کمیٹی نے کمپنی بل2017 کا تفصیل سے جائزہ لیا ۔
قائمہ کمیٹی کے اجلاس میں سیکرٹری خزانہ طارق باجوہ اور چیئرمین سیکورٹیز اینڈ ایکسچینج کمیشن آف پاکستان ظفر حجازی نے قائمہ کمیٹی کو بتایا کہ کمپنیوں کے متعلق قانو ن کا تفصیل سے جائزہ لیتے ہوئے متعلقہ اسٹیک ہولڈرز کی باہمی مشاورت سے قانون کو بین الاقوامی معیار کے مطابق بنانے کی کوشش کی گئی ہے۔
اس حوالے سے 18 سیمینا ر بھی منعقد کرائے گے۔ آج مقابلے کا دورہ ہے اور ہر سال بین الاقوامی سطح پر ممالک کی رینکنگ ہوتی ہے ۔ جب تک اس قانون میں موثر ترامیم نہیں کی جائیں دنیا کا مقابلہ نہیں کیا جا سکے گا۔ یہ بل قومی اسمبلی سے پاس ہو چکا ہے اور قومی اسمبلی کی قائمہ کمیٹی خزانہ نے اس بل میں متعدد ترامیم تجویزکی تھیں جن کو بل میں شامل کر دیا گیاہے اس بل سے کاروبار، سرمایہ کاری اور تجارت نہ صرف فروغ ملے گا بلکہ ملک کے معاشی حالات میں بہتری آئے گیاور لوگ بھی بھر پور مستفید ہونگے ۔

بہتری کے لے اقدامات اٹھائے جارہے ہیں بل میں بہت سی چیزوں کی تعریفیں(Defination) کو شامل کیا ہے جن میں الٹر یشن، بورڈ ، بکس آف اکاﺅنٹس ، چیف فنانشنل افسر، مالی سال ، الیکٹرانک دستاویزات وغیرہ شامل ہیں و ہ چیزیں جو قانون میں استعمال ہو رہی تھیں مگر ان کی تعریف نہیں تھی اب شامل کیا گیا ہے ۔
اور ان چیزوں کی تعریف کی گئی ہے جن کو قانو ن ذمہ داریاں دیتا ہے ۔قائمہ کمیٹی کو بتایا گیا کہ کمپنی کے نام تبدیل ہونے پر پہلے ایک سال تک پرانا نام کمپنی استعمال کرتی تھی اب مدت تین ماہ کر دی ہے ۔ کمپنیوں کواپنا نام دفاتر کے باہر آسان زبان میں تحریر کرنے کا پابند کیاگیا ہے ۔
سینیٹر عائشہ رضا فاروق ایسا کوئی طریقہ کار ہونا چاہیے کہ عام لوگوں کو پتہ چلے کہ کمپنی اصلی یا جعلی ۔جس پر کہا گیا ایس ای سی پی کی ویب سائٹ پررجسٹرڈ کمپنیوں کے نام دیکھے جا سکتے ہیں ۔ تاہم بہت ساری کمپنیاں ایسی بھی ہیں جو جعلی دستاویزات کے ساتھ کام کر رہی ہیں ۔ جس کو روکنے کےلئے اقدامات کیے جارہے ہیں ۔
قائمہ کمیٹی نے آج کے اجلاس میں بل کی 515 شقوں میں سے ابتدائی 80 شقوں کا تفصیل سے جائزہ لیا ۔ چیئرمین و اراکین کمیٹی نے تجاویز کی گئی ترامیم پر اطمینان کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ جس قدر یہ بل انتہائی اہمیت کا حامل ہے اور جو ترامیم تجویز کی گئیں اس سے معاملات میں بہتری نظر آئے گی ۔
قائمہ کمیٹی نے باقی تجاویز کا جائزہ لینے کےلئے آئندہ اجلاس تک معاملہ موخر کر دیا ۔ قائمہ کمیٹی کے آج کے اجلاس میں سینیٹرز مس عائشہ رضا فاروق ، کامل علی آغا کے علاوہ سیکرٹری خزانہ طارق باجوہ ، چیئرمین ایس ای سی پی ظفر حجازی ، ممبر کسٹم ایف بی آر کے علاوہ دیگر اعلیٰ حکام نے شرکت کی ۔
اے پی پی / سعیدہ

وی این ایس