قائمہ کمیٹی امور کشمیر  کا اجلاس ،مقبوضہ کشمیر میں بھارتی ظلم و تشدد کے خلاف مزمتی قرارداد پیش

0
63

اسلام آباد،21 اگست  (اے پی پی): سینٹ کی قائمہ کمیٹی برائے امور کشمیر و گلگت  بلتستان کا اجلاس چیئرمین کمیٹی سینیٹر پروفیسر ساجد میر کی زیر صدارت پارلیمنٹ ہاؤس میں منعقد ہوا۔

قائمہ کمیٹی کے اجلاس میں مقبوضہ کشمیر کی آئینی حیثیت تبدیل کرنے کے حوالے سے وزارت خارجہ امور سے تفصیلی بریفنگ کے علاوہ گلگت بلتستان میں چھوٹے ڈیمز اور ہائیڈرل پاور پروجیکٹس کی فیزیبلیٹی کے معاملات کا تفصیل سے جائزہ لیا گیا۔

قائمہ کمیٹی کے اجلاس میں مقبوضہ کشمیر کی آئینی حیثیت تبدیل کرنے کے حوالے سے بھارتی آئین کے سیکشن 370اور 35-Aکو منسوخ کرنے پر قائمہ کمیٹی نے شدید مذمت کا اظہار کرتے ہوئے قرارداد پاس کی جس میں مقبوضہ کشمیر کی آئینی حیثیت کو تبدیل کرنے کو غیر آئینی اور اقوام متحدہ کی سیکورٹی کونسل کی قراردادوں اور بین الااقوامی قوانین کو توڑنے کے مترادف قرار دیا۔

قرارداد میں نہتے معصوم کشمیروں پر بھارتی فوج کے ظلم اور بربریت کی شدید مذمت کی گئی۔ قرارداد میں کشمیریوں کی نسل کشی،اغواء،غیر قانونی کرفیو اور کشمیری قیادت کی گرفتاریوں کو انسانی حقوق کی خلاف ورزی قراردیتے ہوئے بین الااقوامی کمیونٹی اور اقوام متحدہ سے مطالبہ کیا گیا کہ بھارتی افواج کے غیر انسانی اقدام کا سخت نوٹس لیا جائے اور مقبوضہ کشمیر کی آئینی حیثیت کے معاملے کو بین الاقوامی کرمینل عدالت میں پیش کیا جائے۔ بھارتی وزیراعظم نریند رمودی کے خلاف جنگی کرمینل کاروائی عمل میں لائی جائے۔

وی این ایس اسلام آباد