نواب امان اللہ زرک زئی کے قتل میں ملوث ملزمان خود سلنڈر کردیں ورنہ حکومت کو اپنی رٹ قائم کرنا جانتی ہے:صوبائی وزیر داخلہ ضیا لانگو

0
77

کوئٹہ، 18اگست(اے پی پی):  سول سیکرٹریٹ میں آئی جی پولیس محسن حسن بٹ اور ترجمان حکومت بلوچستان لیاقت شاہوانی کے ہمراہ پریس کانفرنس کرتے ہوئے صوبائی وزیرداخلہ ضیا لانگو کا کہنا تھا کہ دو روز قبل بلوچستان کے بزرگ سیاستدان امان اللہ زرک زئی کو اپنے پوتے سمیت خضدار کے علاقے میں قتل کیا گیا واقعے کے بعد مدعی کی رپورٹ پر تمام نامزد ملزمان کے خلاف ایف آئی آر درج کی گئی ہے جس میں دس ملزمان نامعلوم ہیں پہلی مرتبہ بلاامتیاز ایف آر درج کی گئی۔  کمشنر قلات دو روز تک دیکھیں گے اسکے بعد گرفتاری ہوگی حکومت چادر اور چار دیواری کے تقدس کا خیال رکھے گی ملزمان خود ہی سلنڈر کردیں ورنہ حکومت کو اپنی رٹ قائم کرنا جانتی ہے۔ وزیر داخلہ بلوچستان کا کہنا ہے کہ واقعہ قبائلی رنجش کا ہے حکومت اسے ہر سطع سے دیکھ رہی ہے واقعے سے قبل میر امان اللہ زرک زئی نے حکومت سے کوئی سیکورٹی بھی نہیں مانگی تھی ان کا کہنا تھا کہ بلوچستان کی بدامنی میں بھارت گذشتہ دو دھائیوں سے ملوث رہا ہے اور صوبے میں دہشتگردی پھیلانے کیلئے پانچ سو ملین اخراجات بھی بھارت نے کئے عوام کو جلد دہشگردی سے نجات ملے گی کوئٹہ میں دہشتگردی کے زیادہ واقعات جمہ کے روز پیش آتے ہیں  دہشتگردوں نے ہمیشہ سوفٹ کانر کا انتخاب کیا ہے کچلاک واقعہ بھی اسی سلسلے کی کڑی ہے۔

سورس: وی این ا یس، کوئٹہ