کشمیر ی کسی ایک جماعت کی طرف نہیں،پاکستان کی طرف دیکھ رہے ہیں ،اپوزیشن کے رویے سے کشمیر کاز کو نقصان پہنچ رہا ہے، ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان

0
72

اسلام آباد ، 14 ستمبر (اے پی پی): وزیراعظم عمران خان کے ویژن کو عملی شکل دینے کیلئے تمام ادارے کوشاں ہیں ،جمہوریت اور معاشرہ اپوزیشن کے کردار کے بغیر مکمل نہیں ہوتا، اپوزیشن کے رویے سے کشمیر کاز کو نقصان پہنچ رہا ہے ،جو پاکستانی بیانیے کی نفی کرے گا وہ سیاسی افق سے مٹ جائے گا،آج کشمیر کسی ایک جماعت کی طرف نہیں بلکہ پاکستان کی طرف دیکھ رہا ہے، وزیراعظم عمران خان بھارت کا اصل چہرہ پوری دنیا کے سامنے بے نقاب کررہے ہیں،اپوزیشن وزیراعظم کی کاوشوں میں اپنا مثبت کردار ادا کرے ،بھارتی میڈیا اپوزیشن کے کردار کو اچھال رہا ہے، پاکستان کے قومی معاملات اور بیانیے میں ہم سب کو متحد ہونا چاہیے۔

ہفتہ کو وفاقی وزیر قانون فروغ نسیم کے ہمراہ یہاں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوے وزیراعظم کی معاون خصوصی براے اطلاعات ونشریات ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان نے کہا کہ چھٹی کے روز آپ کی یہاں موجودگی اس بات کی علامت ہے کہ نیشنل کاز پر ہم سب متفق ہیں۔کل مظفرآباد کے جلسے میں ہر طبقہ زندگی سے تعلق رکھنے والے افراد نے اپنے کشمیری بھائیوں کے ساتھ بھر پور انداز میں اظہار یکجہتی کیا۔انہوں نے وزیراعظم عمران خان کی طرف سے تمام میڈیا اینکرز ،رپورٹرز ،کیمرہ مینز،ٹیکنیشنز،عالمی میڈیا،سول سوسائٹی اور آرٹسٹ کمیونٹی سمیت زندگی کے ہر شعبہ سے تعلق رکھنے والے افراد کا شکریہ ادا کیا اور کہا کہ کل ہر طبقہ اور سوچ سے تعلق رکھنے والے افراد کشمیریوں کی آواز بن کر باہر نکلے اور ان کے ساتھ اظہار یکجہتی کیلئے مظفرآباد پہنچے ۔

انہوں نے کہا کہ پاکستان کے عوام کو وزیراعظم عمران خان سے اس فرسودہ نظام کو بدلنے کی توقعات وابسطہ ہیں اور تمام پاکستانی اس گلے سڑے نظام سے نجات حاصل کرنے کیلئے وزیراعظم سے توقعات رکھتے ہیں تاکہ عام آدمی کی زندگی میں بہتری آئے اور اس کو تحفظ حاصل ہوسکے۔انہوں نے کہا کہ ملک میں موجود قوانین کو سول سوسائٹی،میڈیا اور قانونی ماہرین کی مدد سے تبدیل کرنے کے حوالے سے مشاورت کی جارہی ہے اور ملک کے موجودہ فرسودہ نظام اور قوانین میں تبدیلی وزیراعظم عمران خان کی سوچ کی عکاسی اور عوام کی امنگوں کی آئینہ دار ہے۔انہوں نے کہا کہ آپ کی قانونی ٹیم وفاق اور صوبوں کے قوانین میں تبدیلیاں متعارف کروا رہی ہے۔

ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان نے کہا ہے کہ پاکستان کی جمہوریت اور پارلیمان اپوزیشن کے بغیر نامکمل ہے لیکن کشمیر کے مسئلہ پر اپوزیشن اپنے کردار کو بھارتی میڈیا کے آئینہ میں دیکھے کہ وہ کیا کچھ ہائی لائٹ کررہا ہے ۔انہوں نے کہا کہ کیا اپوزیشن کا ذاتی ،سیاسی اور کاروباری ایجنڈا کہیں کشمیر کاز کو نقصان تو نہیں پہنچا رہا ؟ انہوں نے کہا کہ اپوزیشن کے غیر ذمہ دارانہ بیانات قومی بیانیے کو نقصان پہنچا رہے ہیں اس لئے ہمیں کشمیر کاز پر اکٹھا ہونا چاہیے ۔معاون خصوصی نے کہا کہ ہمارے سیاسی مفادات اور منشور اپنی جگہ لیکن اس وقت ملک کو اتحاد کی ضرورت ہے کیونکہ کشمیری کسی جماعت کی طرف نہیں بلکہ پاکستان کی طرف دیکھ رہے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ وزیراعظم عمران خان چٹان جیسے عزائم لے کر پوری دنیا کے سامنے بھارت کو بے نقاب کررہے ہیں، اس پر عالمی برادری ان کے کردار کو سراہتی ہے۔انہوں نے کہا کہ اسی طرح اپوزیشن پر بھی لازم ہے کہ وہ مشترکہ قومی بیانیے کے فروغ میں اپنا کردار ادا کریں۔انہوں نے کہا کہ اپوزیشن کے ذمہ داران اپنے آئینی کردار اور سماج کی دیگر تنظیمیں اس مسئلہ سے لاتعلق نہیں رہ سکتیں کیونکہ جو بھی خود کو مسئلہ کشمیر سے علیحدہ کرے گا وہ ملک کے سیاسی افق سے ختم ہوجائے گا۔

اس موقع پر وفاقی وزیر قانون فروغ نسیم نے پنجاب اور خیبر پختونخوا کے وزرائے قوانین کے ہمراہ قوانین میں تبدیلیوں کے حوالے سے تفصیلی گفتگو کی اور صحافیوں کے مختلف سوالات کے جوابات بھی دیے۔

وی این ایس، اسلام آباد