پاکستان کا ریلوے نظام نیا ہونے جا رہا ہے، کراچی سرکلر ریلوے منصوبہ 9ویں جے سی سی کے منٹس میں شامل کیا گیاہے : مخدوم خسرو بختیار

0
92

اسلام آباد ، 5 نومبر (اے پی پی):وفاقی وزیر برائے منصوبہ بندی، ترقی، اصلاحات و شماریات مخدوم خسرو بختیار نے کہا ہے کہ پاکستان کا ریلوے نظام نیا ہونے جا رہا ہے، کراچی سرکلر ریلوے منصوبہ 9ویں جے سی سی کے منٹس میں شامل کیا گیا ہے۔

انہوں نے منگل کو سی پیک 9ویں جے سی سی اجلاس کے بعد پاکستان میں چین کے سفیر یاﺅ جنگ کے ہمراہ  مشترکہ پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ  یہ ان قوتوں کو جواب دیا ہے جو کہہ رہی تھیں کہ سی پیک پر پیشرفت نہیں ہو رہی، سی پیک میں بہت وسعت آئی ہے، کاپر اور گولڈ سمیت معدنیات کے شعبہ میں تعاون پر بات چیت ہوئی ہے، پاکستان 4 ارب ڈالر کا سٹیل درآمد کرتا ہے۔

 وفاقی وزیر خسرو بختیار نے کہا کہ 12 ارب ڈالرز کے منصوبوں پر اظہار اطمینان کیا گیا ہے ، 6390 میگا واٹ بجلی کے منصوبوں کا جائزہ لیا گیا، آئل ریفائنری منصوبے کے قیام پر تبادلہ خیال کیا گیا، سٹیل سیکٹر کے شعبہ میں چینی سرمایہ کاری بڑھانے پر غور کیا گیا، ایم ایل ون منصوبے پر بڑی پیشرفت ہوئی ہے، اگلے 6 ماہ میں منصوبے کا افتتاح کرنے کی کوشش کریں گے، فنانسنگ کےلئے کمیٹی قائم کر دی گئی ہے۔

انہوں نے کہا کہ ژوب ڈی آئی خان موٹروے منصوبے کو جلد مکمل کرنے پر اتفاق کیا گیا، گوادر میں 300 میگاواٹ بجلی پاور پلانٹ کا افتتاح کیا گیا، چین اور پاکستان زرعی شعبہ میں تعاون کو فروغ دیں گے۔ انہوں نے کہا کہ سی پیک جے سی سی اجلاس تاریخی نوعیت کا تھا۔اجلاس میں 100 چینی وفود نے شرکت کی-

 وفاقی وزیر نے کہا کہ چینی کرنسی کے استعمال کا جائزہ لیا جائے گا، اس معاملہ پر دونوں ممالک کے مرکزی بینک اور ماہرین تبادلہ خیال کریں گے ۔ انہوں نے کہا کہ پاک افغان بارڈر کی فینسنگ 2020ءتک مکمل کر لیں گے، پاک ایران بارڈر پر بھی فینسنگ کی جائے گی، یہ سیکیورٹی کے انتہائی اہم ترین معاہدے ہیں۔

اس موقع پر پاکستان میں چین کے سفیر یاﺅ جنگ نے کہا ہے کہ سی پیک منصوبوں پر عملدرآمد کی رفتار سے مطمئن ہیں، جے سی سی میں نئی سمت کا تعین کیا گیا ہے، آئل اینڈ گیس سیکٹر، ہاﺅسنگ اور منرل ڈویلپمنٹ کو سی پیک میں شامل کیا گیا ہے۔

انہوں نے کہا کہ ایم ایل ون بہت بڑا منصوبہ ہے، خصوصی اقتصادی زونز پر زیادہ توجہ دینے کی ضرورت ہے۔ انہوں کہا کہ صنعتوں کے ذریعے زیادہ زرمبادلہ کمایا جا سکتا ہے، زراعت کے شعبہ میں دوطرفہ تعلقات کو مضبوط کیا جائے گا، سی پیک کے اگلے مرحلہ میں زرعی شعبہ میں تعاون کیا جائے گا۔ چینی سفیر نے کہا کہ پاکستان میں ووکیشنل ٹریننگ سینٹر قائم کئے جائیں گے۔ انہوں نے کہا کہ 9 ویں جے سی سی میں مستقبل کا تعین کر دیا گیا ہے۔

وی این ایس، اسلام آباد

 

Download Video