بھٹو کو زندہ رکھنے کا دعویٰ کرنے والے لاڑکانہ اور تھر میں عوام کی بے بسی دیکھیں: ڈاکٹر فردوس

0
98

حافظ آباد ، 15 دسمبر (اے پی پی): وزیراعظم کی معاون خصوصی برائے اطلاعات و نشریات ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان نے کہا ہے کہ بھٹو کو زندہ رکھنے کا دعویٰ کرنے والے لاڑکانہ اور تھر میں عوام کی بے بسی دیکھیں، نابالغ سیاستدانوں کو اپنی جماعت میں کٹھ پتلیاں نظر نہیں آتیں، سندھ کا وزیراعلیٰ اصل کٹھ پتلی ہے، بلاول بھٹو کو چار سال اسی طرح دکھی ہونا پڑے گا ۔

اتوار کو حافظ آباد پریس کلب میں نو منتخب عہدیداروں کی تقریب حلف برداری سے خطاب کرتے ہوئے انہوں  نے کہا کہ عوام کو گمراہ کرنے کا نظریہ دم توڑ گیا ہے۔ اقتدار سے دور ہونے والا طبقہ اپنے بچوں کو عوام کا نام دے کر نڈھال ہے، اس کی اصل بے چینی لوٹی ہوئی دولت ہے، وہ منی لانڈرنگ سے پیسے لے کر باہر گئے اور ٹی ٹی کے ذریعے واپس لائے، ایک پارٹی کے نابالغ سیاستدان کوئٹہ میں بھٹو کے نظریے کی تعریف کر رہے تھے، وہ یہ کہہ رہے تھے کہ وہ بھٹو کے خون سے جڑا وارث اور بی بی کی نشانی ہیں، اگر بھٹو کے نظریے کا نام لے کر لاڑکانہ میں کتے کے کاٹنے سے مرنے والوں کی شرح دیکھ لیتے، ایڈز کا شکار مریضوں کو گن لیتے تو انہیں یہ پوچھنے کی ضرورت نہ پڑتی کہ بھٹو کا وارث کون ہے؟۔ بھٹو اگر زندہ ہے تو مریض مر چکا ہے، دولت کے پجاری اور عوام کو گدھ کی طرح نوچنے والے قانون کے شکنجے میں آتے ہی رونا شروع ہو جاتے ہیں۔

ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان نے کہا کہ ایک خاندان بیماری کے نام پر ضمانت لے کر باہر چلا گیا، بیمار کے ساتھ سہولت کار بھی ملک سے چلا گیا ہے، سہولت کار کا اسمبلی میں چیمبر ان کا منتظر ہے،شہباز شریف نے بطور وزیراعلیٰ سابقہ دور میں کرپشن کا بازار گرم کیے رکھا، کراچی کو عمران خان کی قیادت میں ایک بار پھر روشنی کا شہر بنائیں گے۔

معاون خصوصی نے کہا کہ اختیارات کی نچلی سطح پر منتقلی وزیراعظم عمران خان کا مشن ہے، کچھ لوگ اقتدار سے محرومی کا درد کو عوام بنا کر پیش کر رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ایسے عناصر کو اقتدار سے باہر ہونے پر عوامی درد نظر آتا ہے، اپنی خواہشات کو عوام کا نام دے کر اقتدار سے محرومی کا ڈھنڈورا پیٹ رہے ہیں، بھٹو کا نام لے کر سیاست کرنے والے عوامی مسائل سے آگاہ نہیں، سندھ میں اگر بھٹو زندہ ہے تو غریب مر چکا ہے۔

ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان نے کہا کہ عوام اصل ایمپائر ہیں جنہوں نے لاڑکانہ انتخاب میں اپنا فیصلہ سنایا، چار سال بعد یہی عوام ووٹ کی طاقت سے عمران خان کو دوبارہ منتخب کریں گے، وفاق کی زنجیر سمجھے جانے والی جماعت چند اضلاع تک محدود ہو گئی ہے۔ انہوں نے کہا کہ پورا سندھ موہنجو داڑو کا نقشہ پیش کر رہا ہے، نااہل صوبائی حکومت کے باعث کراچی شہر کچرا کنڈی میں بدل چکا ہے، وزیراعظم کی قیادت میں کراچی کو دوبارہ روشنیوں کا شہر بنائیں گے۔

معاون خصوصی نے کہا کہ اربوں کھربوں کی کرپشن والے شہباز شریف کےلئے ڈھیلے اور دمڑی کی بات مناسب نہیں، شہباز شریف اور ان کا خاندان ملک آ کر عدالتوں کا سامنا کرے۔ملک میں مہنگائی ہے، لیکن ماضی کی کرپشن اس کی ذمہ دار ہے۔ انہوں نے کہا کہ گزشتہ 10سال میں پنجاب اور وفاق کو ادھار لے کر چلا گیا، قرضے لے لے کر ملکی معیشت کو کھوکھلا کر دیا گیا، وزیراعظم عوام کو مہنگائی سے نجات دلانے اور ان کی مشکلات کے ازالے کےلئے پرعزم ہیں۔ انہوں نے کہا کہ زرعی شعبے کی ترقی کےلئے کاشتکاروں کو مراعات دی جا رہی ہیں، سستی کھاد اور بیج کی فراہمی کےلئے اقدامات کیے جا رہے ہیں، وزیراعظم کی ذاتی کوششوں سے سی پیک میں پہلی مرتبہ زرعی شعبہ شامل کیا گیا ہے، ملکی ترقی کےلئے زرعی انقلاب ناگزیر ہے۔

معاون خصوصی نے حافظ آباد پریس کلب کےلئے 10لاکھ گرانٹ کا اعلان بھی کیا جبکہ حافظ آباد پریس کلب کو نیشنل پریس کلب اسلام آباد کے برابر لانے، حافظ آباد میں صحافی کالونی کے لئے بھرپور کوششیں کرنے اور اس ضمن میں ڈپٹی کمشنرکو اراضی کی نشاندہی کی ہدایت کی۔ انہوں نے کہا کہ ملک بھر میں صحافیوں کو ہیلتھ کارڈ کی فراہمی کےلئے پالیسی بنائی جا رہی ہے۔

سورس: وی  این ایس،  اسلام آباد