سی پیک نا صرف پاکستان بلکہ وسطی اور جنوبی ایشیا میں رابطوں کو آگے بڑھائے گا: اسپیکر قومی اسمبلی

0
175

پشاور ،13 نومبر (اے پی پی ):اسپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر نے کہا ہے کہ سی پیک نا صرف پاکستان بلکہ پورے وسطی اور جنوبی ایشیاء میں رابطوں کو آگے بڑھائے گا بلکہ اس منصوبے سے چین اور پاکستان کے علاوہ ایران، افغانستان،  بھارت، وسطی ایشائی ریاستیں اور خطے کے دیگر ممالک مستفید ہونگے۔

ان خیالات کا اظہار انہوں نے جمعہ کو پشاور میں پارلیمانی کمیٹی برائے اقتصادی راہداری کے زیر اہتمام سی پیک کے حوالے سے منعقدہ مکالمے بعنوان”سی پیک کے تحت سرمایہ کاری، تجارت اور عوامی رابطوں کو فروغ دینے میں پارلیمان کا کردار” کی افتتاحی تقریب سے خطاب میں کیا۔

اسپیکر نے کہا کہ پاکستان خطے میں امن،ترقی اور معاشی استحکام کا خواہشمند ہے، ون پیلٹ اینڈ روڈ اقدام کے تحت سی پیک متعدد ریاستوں کی شمولیت کے ذریعے سے علاقائی رابطوں  کو فروغ دینے کا موقع فراہم کرتا ہے۔

 انہوں نے کہا کہ خیبرپختونخواہ، چین کو افغانستان اور وسطی ایشائی ریاستوں سے جوڑنے کا واحد ذریعہ ہے، خیبرپختونخواہ پاکستان اور چین دونوں کے لیے تجارت کی نئی راہیں کھولے گا، مستقبل میں خیبرپختونخواہ اپنے جغرافیائی اہمیت کی بدولت اہم تجارتی مرکز بنے گا۔

اسپیکر قومی اسمبلی نے کہا کہ  رواں ماہ رشکئی اقتصادی زون کا افتتاح ہو رہا ہے جس سے صوبے میں سرمایہ کاری اور روزگار کے نئے مواقع فراہم ہونگے، پاکستان سی پیک منصوبے کی جلد تکمیل کے لیے کوشان ہے۔ انہوں نے کہا کہ پارلیمان، قانون سازی اور نگرانی کے اختیار کے تحت ایک مثبت کردار ادا کر رہی ہے، سی پیک منصوبوں کی مؤثر نگرانی اور ان پر عملدرآمد کو یقینی بنانے کے لیے پارلیمانی کمیٹی برائے سی پیک قائم کی گئی ہے۔

انہوں نے  کہا کہ  پشاور کو ان شاءاللہ سی پیک کے تحت جاری منصوبوں کے ذریعے جنوبی ایشیائی ممالک میں تجارت کا مرکز بنائیں گے، یہ خطہ دہشتگردی کے خلاف جنگ اور افغان جنگ کی وجہ سے بہت زیادہ متاثر ہوا۔

اسپیکر اسد قیصر نے مزید کہا کہ پاکستان افغانستان کے ساتھ قریبی برادرانہ تعلقات کو مزید  وسعت دینے ک خواہاں ہے۔گزشتہ ماہ میری دعوت پر افغانستان وولوسی جرگہ کے اسپیکر اراکین پارلیمنٹ اور تجارتی برادری ہمراہ پاکستان کا دورہ کیا، دسمبر میں افغانستان کا دورہ کرنے کا ارادہ رکھتا ہوں، افغانستان نے سی پیک میں شمولیت کے لیے آمادگی کا اظہار کیا ہے جو خوش آئند ہے۔

اے پی پی /صائمہ/نورین