پاکستان اور سری لنکا کااعلی سطح پر وفود کے تبادلوں،تجارت،دفاعی تعاون،سرمایہ کاری،سائنس وٹیکنالوجی،ثقافت اورسیاحت کے شعبوں میں تعاون بڑھانے پر اتفاق

79

کولمبو۔23فروری  (اے پی پی):پاکستان اور سری لنکا نے اعلی سطح پر وفود کے تبادلوں،تجارت،دفاعی تعاون،سرمایہ کاری،سائنس وٹیکنالوجی،ثقافت اورسیاحت کے شعبوں میں تعاون بڑھانے پر اتفاق کیا ہے۔وزیر اعظم میڈیا آفس سے جاری اعلامیہ کے مطابق وزیر اعظم عمران خان نے منگل کو سری لنکا کے وزیر اعظم مہندرا راجا پاکسے کے ساتھ ٹمپل ٹریز (وزیر اعظم کے دفتر) میں وسیع مشاورت کی۔ دونوں وزرائے اعظم کے درمیان ون آن ون ملاقات کے بعد دونوں فریقین کے مابین وفود کی سطح پر بات چیت ہوئی۔دونوں رہنمائوں نے جنوبی ایشیاء میں امن ،استحکام اور معاشی خوشحالی کے مشترکہ مقاصد کو آگے بڑھانے کے لئے پاکستان اور سری لنکا کے مابین وسیع البنیاد اور پائیدار شراکت کو تقویت دینے پر توجہ دینے کے لئےوسیع پیمانے پر تبادلہ خیال کیا۔دونوں رہنماؤں نے وسیع شعبوں میں مل کر کام کرنے کے اپنے عزم کی تصدیق کی۔ انہوں نے تجارت اور سرمایہ کاری ، آئی ٹی اور انسانی وسائل کی ترقی ، زراعت اور سائنس و ٹیکنالوجی، سیکیورٹی اور دفاعی تعاون اور ثقافت اور سیاحت کے شعبوں میں باہمی فائدہ مند تعاون کے بے پناہ مواقع اور وسیع امکانات کا اعتراف کیا،پاکستان کے متمول بدھ مت ورثے اور مذہبی سیاحت کی صلاحیت کی تعریف کرتے ہوئے مہمان نوازی کی صنعت،تربیت اور ہنرمندی میں مہارت کے اشتراک سے باہمی تعاون کو بڑھانے پر اتفاق کیا گیا۔دونوں فریقوں نے کثیرالجہتی شعبے میں دونوں ممالک کے مابین قریبی تعاون پر اطمینان کا اظہار کیا اور تمام سطحوں پر اسٹریٹجک مواصلات اور ہم آہنگی کو مزید وسیع کرنے کا عزم کیا۔دونوں ممالک کے مابین اعلی سطح کے تبادلے کی رفتار کو برقرار رکھنے پر بھی اتفاق کیا گیا۔دونوں فریقوں نے مشاہدہ کیا کہ پاکستان اور سری لنکا نے غیر معمولی کووڈ19 وبائی بیماری سے نمٹنے میں نسبتا بہتر کارکردگی کا مظاہرہ کیا ہے۔ بین الاقوامی تناظر میں ، اس وبائی امراض کے منفی سماجی و معاشی اثرات کو کم کرنے کے لئے ترقی پذیر ممالک کے لئے وزیر اعظم عمران خان کے قرض سے متعلق امداد پر عالمی اقدام کی اہمیت کو اجاگر کیا گیا۔وزیر اعظم عمران خان نے خطے میں قیام امن اور استحکام کے لئے پاکستان کے عزم کا اعادہ کیا۔ وزیر اعظم نے افغانستان میں تنازعہ کے سیاسی حل کو فروغ دینے کے لئے ہر طرف سے تعمیری مشغولیت پر بھی زور دیا۔جیو اسٹریٹجک سے جیو اکنامکس کی طرف پاکستان کی توجہ مرکوز کی گئی۔ پاکستان کے معاشی تحفظ کے نقطہ نظر کے تین ستون امن ، ترقی کی شراکت داری اور رابطے پر زور دیا گیا۔ وزیر اعظم نے بات چیت کے ذریعے تنازعات کے حل اور جنوبی ایشیاء اور اس سے آگے امن ، ترقی اور خوشحالی کے وژن کو فروغ دینے کی اہمیت پر زور دیا۔دونوں فریقوں نے سارک میثاق کے اصولوں اور مقاصد سے وابستگی کا اعادہ کیا اور اس کی اہمیت پر اتفاق کیا۔علاقائی تعاون کے لئے سارک کے عمل کو آگے بڑھا رہے ہیں۔وزیر اعظم عمران خان نے سری لنکا میں ان کے اور وفد کے پرتپاک استقبال اور پرتپاک مہمان نوازی پر وزیراعظم مہندا راجا پاکسے کی گہری تحسین اور اظہار تشکر کیا۔وزیر اعظم عمران خان نے وزیر اعظم مہندا راجاپاکسے کو پاکستان کے دورے کی دعوت دی۔دونوں رہنماؤں نے سیاحت ، سرمایہ کاری ، تعلیم اور ٹیکنالوجی کے شعبوں میں باہمی تعاون پر اہم مفاہمت کی یاداشتوں پر  دستخط کی تقریب میں بھی شرکت کی۔بعد میں دونوں رہنماؤں نے مشترکہ طور پر میڈیا سے گفتگو کی۔اس اجلاس کے بعد وزیر اعظم عمران خان اور ان کے وفد کے اعزاز میں وزیر اعظم مہندا راجا پاکسے کی میزبانی میں ضیافت کا اہتمام کیاگیا۔