وزیراعظم کے ڈیجیٹل پاکستان کے وژن کے مطابق دسمبر 2022 تک بلوچستان سمیت پورے ملک میں 5G نیٹ ورک کو پھیلانا ہے۔ وفاقی وزیر آئی ٹی و ٹیلی کمیونیکیشن سید امین الحق

6

کوئٹہ (30 جولائی(اے پی پی) : وفاقی وزیر آئی ٹی و ٹیلی کمیونیکیشن سید امین الحق نے کہا کہ بلوچستان کی پسماندگی اور بے روز گاری کو مد نظر رکھ کر آئی ٹی کے شعبے میں یہاں کے نوجوانوں کو روزگار کے مواقع فراہم کیے جائینگے اس سلسلے میں بلوچستان سے تعلق رکھنے والے ایک سو طلباءکو آئی ٹی کے حوالے سے انٹرن شیپ دیا جائے گا۔انہوں نے کہا وزیر اعظم عمران خان کے ویژن کے مطابق کمزور اور ماضی میں ترقی سے رہ جانے والے علاقوں کو ہر سیکٹر میں ترقی دی جائیگی۔وفاقی وزیر آئی ٹی سید امین الحق نے یہ بات کوئٹہ میں الٹرا سافٹ سافٹویئر ٹیکنالوجی پارک کے دورے کے موقع پر کہی۔وفاقی وزیر نے کہا کہ وزیراعظم کے ڈیجیٹل پاکستان کے وژن کے مطابق دسمبر 2022 تک بلوچستان سمیت پورے ملک میں 5G نیٹ ورک کو پھیلانا ہے۔ تربت اور آواران میں بھی 3G اور 4G نیٹ ورک کھول دئے گئے ہیں جبکہ وزیراعظم کے ہدایت پر 500 ٹریننگ پروگرام صرف بلوچستان کے لوگوں کیلئے رکھے گئے ہیں۔ وفاقی وزیر نے آئی ٹی شعبے کی ترقی پر روشنی ڈالتے ہوئے کہا کہ آئی ٹی برآمدات کا 30 جون تک 2 ارب ڈالرز کے ہدف کو عبور کرلیا گیا.آئی ٹی برآمدات 2 ارب, 12 کروڑ 30 لاکھ روپے تک پہنچ گئیں. گزشتہ مالی سال کے اسی عرصے کے دوران برآمدات 1 ارب 44 کروڑ ڈالرز تھیں.انھوں نے کہا کہ آئی ٹی برآمدات میں 47 اعشاریہ چار تین فیصد کا ریکارڈ اضافہ ہوا.انشاءاللہ 2023 تک آئی ٹی برآمدات کا 5 ارب ڈالرز کا ہدف پورا کرلیں گے وفاقی وزیر نے کہا کہ آئی ٹی برآمدات میں تاریخی اضافے پر پاکستان سافٹ ویئر ایکسپورٹ بورڈ اور آئی ٹی کمپنیاں مبادکباد کی مستحق ہیں.انھوں نے کہا کہ ڈیجیٹل پاکستان ویژن کے تحت وزارت آئی ٹی ملک میں آئی ٹی کے شعبہ سے روزگار کے لاکھوں مواقع پیدا کرنے کے ساتھ ساتھ معیشت کو استحکام دینے کیلئے اپنی تمام کوششیں اور وسائل کو بروئے کار لارہی ہے۔