شہری کورونا کے حوالے سے ایس او پیز پر سختی سے عملدرآمد کریں، وفاقی وزیر عبدالقادر پٹیل

8

اسلام آباد۔5جولائی  (اے پی پی):وفاقی وزیر برائے قومی صحت عبدالقادر پٹیل نےکہا ہے کہ شہری کورونا کے حوالے سے ایس او پیز پر سختی سے عملدرآمد کریں، کوہسار بلاک میں ڈسپنسری وقت کی اہم ضرورت تھی، ڈسپنسری میں تین  ہزار افراد کو ابتدائی طبی امداد کی سہولت دستیاب ہو گی۔ منگل کو کوہسار کمپلیکس میں ڈسپنسری کے افتتاح کےموقع پر خطاب کرتے ہوئے وفاقی وزیر صحت نے کہا کہ کوہسار بلاک میں ڈسپنسری وقت کی اہم ضرورت تھی، ڈسپنسری میں تین  ہزار افراد کو ابتدائی طبی امداد کی سہولت دستیاب ہو گی۔ انہوں نے کہا کہ صحت سہولت کارڈ کے حوالے سے خبیر پختونخوا حکومت کو خط لکھا تھا، کے پی حکومت قبائلی اضلاع میں صحت کو کارڈ سیاسی کارڈ کے طور استعمال کر رہی ہے، جو الزام کے پی حکومت لگا رہی وہ سمری عمران خان منظور کر کے گئے تھے، پی ٹی آئی نے سرکاری ہسپتالوں کو مادرپدر آزاد کیا تھا۔ انہوں نے کہا کہ حکومت پمز ہسپتال میں ایف ایم ٹی آئی کا قانون واپس کرنے جا رہی ہے، پمز حادثے میں کوئی کوتاہی نظر آئی تو کریمنل کارروائی ہو گی۔ انہوں نے کہا کہ شہری کورونا کے حوالے سے ایس او پیز پر سختی سے عملدرآمد کریں، کورونا میں اضافہ ہوا ،اس کے ايس او پيز جارى کر دیئے ہیں ۔انتظاميہ کے ساتھ اين آئى ايچ اور اين سى او سى مسلسل رابطے میں ہیں ،کورونا ايس او پيز کے حوالے سے سختى جتنى کرنی پڑى تو کریں گے کيونکہ عوام کى جانيں زيادہ اہم ہیں ۔  وفاقی وزیر صحت نے کہا کہ پمز میں کل ايک حادثہ پيش آيا ہے ،،اداروں کو جب مدر پدر آزاد کر ديں تو اس طرح کے واقعات ہوتے ہیں ،انسانی جانوں کا ہميں بڑا احترام ہے۔ انہوں نے کہا کہ ايم ٹى آئى ايکٹ میں ترميم انشاء اللہ لائيں گے۔ انہوں نے کہا کہ اگر پمز میں موجود مريضوں کى جانوں سے کھيلا گيا تو ذمہ داران کے خلاف سخت کارروائی ہو گی۔