وزیر اعظم کی ماحولیات کو درپیش چیلنجز سے نمٹنے کے اقدامات میں ہر طبقے کی شمولیت کو یقینی بنانے  کی ہدایت

0
63

اسلام آباد، 17 اگست (اے پی پی):وزیراعظم عمران خان نے  وزرات موسمیاتی تبدیلی کوہدایت کی ہے کہ ماحولیات کو درپیش چیلنجز سے نمٹنے اور ماحولیاتی تحفظ کے لئے مختلف اقدامات میں ہر طبقے کی شمولیت کو یقینی بنایا جائے،ماحولیات کے تحفظ کے حوالے سے وفاقی دارالحکومت کو ماڈل سٹی بنایا جائے اور اس مہم کو ملک کے دیگر شہروں  تک پھیلایا جائے۔

انہوں نے یہ ہدایات ہفتہ کو ”کلین اینڈ گرین پاکستان انڈیکس”  منصوبے پر بریفنگ اجلاس  کی صدارت کرتے ہوئے دیں۔اجلاس میں مشیر برائے ماحولیاتی تبدیلی ملک امین اسلم کی جانب سے وزیرِ اعظم کو ”کلین اینڈ گرین پاکستان انڈیکس ” منصوبے، دس ارب درخت لگانے کے منصوبے پر اب تک ہونے والی پیش رفت، وفاقی دارالحکومت میں پلاسٹک بیگزکے استعمال پر پابندی، الیکٹرک وہیکلز پالیسی، گرین بلڈنگز سے متعلق قواعد و ضوابط  اور ماحولیاتی تحفظ کے سلسلے میں دیگر اقدامات پر تفصیلی بریفنگ دی گئی۔ انہوں نے بتایا کہ ٹین بلین ٹری سونامی منصوبے کے تحت صوبائی سطح پر منصوبہ بندی کا عمل مکمل کر لیا گیا ہے اور اس سلسلے میں پی سی ون تشکیل دیئے جا چکے ہیں۔منصوبے کے پہلے مرحلے میں تقریبا سوا تین ارب پودے لگائے جائیں گے جس کا دو سال بعد جائزہ لیا جائے گا۔

مشیر ماحولیات نے کہاکہ وفاقی دارالحکومت میں پلاسٹک بیگز پر پابندی کے آغاز میں ہی نہایت حوصلہ افزاء نتائج موصول ہوئے ہیں،اس اقدام کو ہر طبقے کی جانب سے سراہا جا رہا ہے۔  انہوں نے آگاہ کیا کہ الیکٹرک وہیکلز کے ضمن میں پالیسی مرتب کر لی گئی ہے جسے بہت جلد کابینہ کے سامنے پیش کر دیا جائے گا ۔انہوں نے کہاکہ گرین بلڈنگز کے فروغ کے لئے قواعد و ضوابط بھی مرتب کئے جا چکے ہیں جنہیں بہت جلد پیش کیا جائے گا۔

 اجلاس میں مشیر ماحولیات کی جانب سے ”کلین اینڈ گرین پاکستان انڈیکس”منصوبے پر تفصیلی بریفنگ دیتے ہوئے کہا گیا کہ ”کلین اینڈ گرین پاکستان انڈیکس” منصوبے کا آغاز ستمبر میں کیا جائے گا۔ “کلین اینڈ گرین پاکستان انڈیکس” منصوبے کے تحت ہریالی اور صفائی کے معیار پر ملک کے شہروں اور مضافاتی علاقہ جات کی درجہ بندی کی جائے گی۔وفاقی، صوبائی اور مقامی حکومتوں کی شراکت داری سے “کلین اینڈ گرین پاکستان انڈیکس” منصوبے کے تحت  فراہمی و نکاسی آب، سالڈ ویسٹ منیجمنٹ، صفائی ستھرائی، پارکس اور درختوں کی شرح کو معیار بناتے ہوئے شہروں کی درجہ بندی کی جائے گی۔ پہلے مرحلے میں پنجاب کے بارہ اور خیبرپختونخوا کے سات شہروں میں “کلین اینڈ گرین پاکستان انڈیکس” منصوبے کو شروع کیا جائے گا۔

  اجلاس میں مشیر ماحولیات کی جانب سے  کل (اتوار)کو لاہور میں شروع کی جانے والی شجر کاری مہم کے حوالے سے بھی بریفنگ دی گئی ۔ اس مہم کے دوران تین کروڑ پودے لگائے جائیں گے۔اس موقع پر وزیرِ اعظم نے  ماحول کے تحفظ اور ملک میں ہریالی کو فروغ دینے کے سلسلے میں وزارتِ تحفظ ماحولیات کے مختلف اقدامات کو سراہا۔

وزیراعظم نےاجلاس میں  اس امر پر زور دیا کہ ماحولیات کو درپیش چیلنجز سے نمٹنے کے لئے ضروری ہے کہ ماحول کے تحفظ کے سلسلے میں اٹھائے جانے والے مختلف اقدامات میں ہر طبقے کی شمولیت کو یقینی بنایا جائے اور عوام میں اس بارے شعور اجاگر کیا جائے۔ وزیراعظم نے کہا کہ  وفاقی دارالحکومت میں پلاسٹک بیگ پر پابندی مہم میں عوام کا مثبت ردعمل نہایت حوصلہ افزاء  ہے۔ اس مہم کو مکمل طور پر کامیاب بنانے کے لئے سکولوں اورطلبہ کی بھرپور شرکت پر خصوصی توجہ دی جائے۔ وزیرِ اعظم نے کہاکہ ماحولیات کے تحفظ کے حوالے سے وفاقی دارالحکومت کو ماڈل سٹی بنایا جائے اور اس مہم کو ملک کے دیگر شہروں  تک پھیلایا جائے۔

وی این ایس، اسلام آباد