Home National وزیراعظم  شہباز شریف کی طرف سے اسلام آباد کیپٹل ٹیریٹری کے  ایک...

وزیراعظم  شہباز شریف کی طرف سے اسلام آباد کیپٹل ٹیریٹری کے  ایک لاکھ 85 ہزار مستحق خاندانوں کے لئے آٹے کا تحفہ

اسلام آباد،17مارچ  (اے پی پی):وزیرِ اعظم محمد شہباز شریف نے اسلام آباد کیپٹل ٹیریٹری کے ایک لاکھ 85 ہزار مستحق خاندانوں کے لئے آٹے کا تحفہ دیا ہے ،مستحق خاندان آٹے کا تحفہ (کل )ہفتہ سے حاصل کر سکیں گے،مستحق افراد مفت آٹا اسلام آباد کیپٹل ٹیریٹری میں یوٹیلٹی سٹورز کے 40 پوائنٹس سے حاصل کر سکیں گے،مستحق افراد کا ڈیٹا بینظیر انکم سپورٹ پروگرام سے منسلک ہو گا، انتظار کی زحمت سے بچنے کے لئے  مستحق افراد بینظیر انکم سپورٹ پروگرام کے نمبر 8171پر اپنا شناختی کارڈ نمبر بھیج کر آٹےکے حصول کےحوالے سےاپنی اہلیت جانچ سکتے ہیں۔

 وزیراعظم محمد شہباز شریف نے کہا کہ رمضان المبارک میں غریب و متوسط طبقے کے مسائل کو کم کرنے کی کوشش کر رہے ہیں، مہنگائی کے دور میں حکومت عوام کو ریلیف فراہم کرنے کی بھرپور کوشش کر رہی ہے۔انہوں نے ہدایت دی کہ آٹے کی فراہمی کے وقت عوام کو  طویل قطار کی زحمت سے بچانے کے لئے  اقدامات کئے جائیں۔

 ان خیالات کا اظہار انہوں نے اپنے زیرصدارت رمضان المبارک کے دوران اسلام آباد کیپٹل ٹیریٹری کے عوام کو ریلیف کی فراہمی کے حوالے سے اہم اجلاس میں کیا ۔ اجلاس میں فیصلہ کیا گیا کہ رمضان کے دوران وفاقی حکومت کی جانب سے اسلام آباد کیپٹل ٹیریٹری کے ایک لاکھ  85ہزار  مستحق خاندانوں کے لئے آٹے کا تحفہ دیا جائے گا، وہ خاندان جو کہ بینظیر انکم سپورٹ پروگرام کے ساتھ رجسٹرڈ ہیں اور جس کا پاورٹی سکور (پی ایم ٹی) 60 یا اس سے کم ہے وہ 18 مارچ 2023  سے اس سہولت سے فائدہ اٹھا سکیں گے، رجسٹرڈ  خاندان ایک مہینے کے دوران 30 کلو آٹا حاصل کر سکے گا، مستحق افراد مفت آٹا اسلام آباد کیپٹل ٹیریٹری میں یوٹیلٹی سٹورز کے 40 پوائنٹس سے حاصل کر سکیں گے،مستحق افراد  بینظیر انکم سپورٹ پروگرام کے نمبر 8171 پر اپنا شناختی کارڈ نمبر بھیج کر آٹے کے حصول کے حوالے سےاپنی اہلیت جانچ سکتے ہیں۔  اس حوالے سے کسی بھی قسم کی شکایات کے لئے ٹال فری نمبر  05590۔0800 پر رابطہ کیا جا سکتا ہے۔

اجلاس  میں وفاقی وزیرِ خزانہ و محصولات اسحاق ڈار، مشیرِ وزیرِ اعظم احد چیمہ، سابق رکن قومی اسمبلی طارق فضل چوہدری ، چیئرمین کیپٹل ڈویلپمنٹ اتھارٹی ،منیجنگ ڈائریکٹر یوٹیلٹی سٹورز کارپوریشن اور دیگر متعلقہ اعلیٰ حکام نے شرکت کی۔

Exit mobile version