توانائی صنعتی اور تجارتی سرگرمیوں کو برقرار رکھنے کے لیے اقتصادی ترقی کے لیے سب سے اہم ان پٹ میں سے ایک ہے، وفاقی وزیر ایاز صادق

7

اسلام آباد، 23 جون( اےپی پی):  وفاقی وزیر برائے اقتصادی امور سردار ایاز صادق نے توانئی ضرورت واہمیت پر زور دیتے ہوئے کہا ہے کہ توانائی صنعتی اور تجارتی سرگرمیوں کو برقرار رکھنے کے لیے اقتصادی ترقی کے لیے سب سے اہم ان پٹ میں سے ایک ہے ۔ انہوں نے یہ بات وزارت میں غیر ملکی فنڈڈ پراجیکٹس کے بارے میں قومی رابطہ کمیٹی کے تیسرے فالو اپ اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے کہی جس میں غیر ملکی فنڈ سے چلنے والے وفاقی توانائی کے شعبے کے منصوبوں کا جائزہ لیا گیا۔ اجلاس میں ایس اے پی ایم، ایڈیشنل سیکرٹری انرجی، ایس ایم بی آر (پنجاب اور سندھ)، اے سی ایس (کے پی)، عمل درآمد کرنے وا لے ادروں کے ایم ڈیز اور سی ای اوز نے شرکت کی۔

اقتصادی امور کے وزیر نے شرکاءکا خیرمقدم کیا اور پاکستان کے توانائی کے شعبے کی اہمیت پر زور دیا۔ انہوں نے کہا کہ توانائی صنعتی اور تجارتی سرگرمیوں کو برقرار رکھنے کے لیے اقتصادی ترقی کے لیے سب سے اہم ان پٹ میں سے ایک ہے۔جوائنٹ سیکرٹری ( ای سی ) نے کمیٹی کواجلاس کے پس منظر اور مقصد کے بارے میں آگاہ کیا اور خاص طور پر مشکل اور اعتدال پسند تسلی بخش منصوبوں اور ان کے مسائل پر روشنی ڈالی۔ انہوں نے کمیٹی کو آگاہ کیا کہ ای اے ڈی معیشت کے

 مختلف شعبوں کے 34.8 بلین ڈالر کے غیر ملکی فنڈڈ منصوبوں کے جاری پورٹ فولیو کا انتظام کر رہا ہے۔ کل پورٹ فولیو میں سے، $15 بلین (43%) کو مسئلہ سمجھا جاتا ہے۔ وفاقی توانائی کے منصوبوں کا حصہ 3.3 بلین ڈالر ہے، جس میں سے 2.3 بلین ڈالر ز کے منصوبوں کو مسئلہ قرار دیا گیا ہے۔