کیپٹل مارکیٹ کی ترقی میں رکاوٹ بننے والے مسائل کے حل کیلئے پرعزم ہیں؛ وفاقی وزیر خزانہ مفتاح اسماعیل

3

کراچی،5اگست  (اے پی پی):وزیر خزانہ و محصولات مفتاح اسماعیل نے کہا ہے کہ میں کیپٹل مارکیٹس کی اہمیت اور جدید معیشت کی ترقی میں ان کے اہم کردار کو بخوبی سمجھتا ہوں،ہم ان تمام مسائل کو حل کرنے کے لیے پرعزم ہیں جوکیپٹل مارکیٹ کی ترقی میں رکاوٹ ہیں۔

 ان خیالات کا اظہار انہوں نے جمعہ کو پاکستان اسٹاک ایکسچینج (پی ایس ایکس) کے کاروباری روز کے آغاز پر گونگ بجانے کی تقریب میں بحیثیت مہمان خصوصی شرکت کرتے ہوئے کیا۔ اس موقع پر انہوں نے کاروباری روز کا آغاز گونگ بجا کر کیا۔ گونگ تقریب میں چیئرمین ایس ای سی پی عامر خان،ایم ڈی اور سی ای او پی ایس ایکس فرخ ایچ خان، پی ایس ایکس بورڈ کے اراکین،اہم اسٹیک ہولڈرز اور معزز مہمانوں نے شرکت کی۔

وفاقی وزیر خزانہ  مفتاح اسماعیل نے ملک میں موجودہ میکرو اکنامک صورتحال کے بارے میں گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ ایک ماہر معاشیات کے طور پر میں بنیادی باتوں کو دیکھتا ہوں،میکرو اکنامک نقطہ نظر سے ہمیں اپنی معیشت کو سالوینٹ رکھنا ہے اور اسے ڈیفالٹ سے بچانا ہے،چند روزسے امریکی ڈالر کے مقابلے میں روپے کی قدر بڑھنے لگی ہے  کیونکہ ہم نے درآمدات کو کم کیا، اس طرح ہمارے زرمبادلہ کے اخراج میں کمی آئی ہے۔ اگرچہ ترقی کے لحاظ سے یہ سب سے بہتر صورت حال نہیں ہے لیکن یہ ماضی  سے کہیں بہتر ہے، میں ذاتی طور پر درآمدی متبادل ماڈل پر یقین نہیں رکھتا اور میں برآمدات میں توسیع کے حق میں ہوں، یہ وہ جگہ ہے جہاں ہم اپنی کوششوں پر توجہ مرکوز کرنے کا ارادہ رکھتے ہیں اور ہم اسے پائیدار اقتصادی ترقی کے لیے آگے بڑھائیں گے۔

  مفتاح اسماعیل نے مزید کہاکہ ہمارا ٹیکس ٹو جی ڈی پی 9.2فیصد پر بہت کم ہے،ہمیں معاشی استحکام حاصل کرنے کے لیے بہتر کام کرنا ہوگا اور ہم اس سلسلے میں بتدریج اور منظم انداز میں اصلاحات کریں گے،فیول سبسڈی ختم کرنے اور براہ راست ٹیکسوں میں اضافہ جیسے فوری اقدامات کے ثمرات حاصل ہو رہے ہیں اور ملک کو ڈیفالٹ ہونے سے بچایا گیاہے۔

 قبل ازیں وفاقی وزیر خزانہ کا خیرمقدم کرتے ہوئے ایم ڈی پی ایس ایکس فرخ خان نے کہا کہ ہمیں یہ اعزاز حاصل ہے کہ آج ہمارے درمیان معزز وفاقی وزیر موجود ہیں اور ہم پی ایس ایکس میں ان کی موجودگی کا تہہ دل سے خیرمقدم کرتے ہیں۔ انہوں نے مزید کہا کہ پاکستان کی معیشت کی ترقی کے لیے ایک سازگار ماحول پیدا کرنا ناگزیر ہے جو کہ زیادہ سے زیادہ کمپنیوں اور سرمایہ کاروں کو کیپٹل مارکیٹوں کی طرف راغب کرنے میں مدد دے گا۔ ایک وسیع البنیاد کیپٹل مارکیٹ اہم معاشی اور سماجی مقاصد کو حاصل کرنے میں مدد کرتی ہے، جس میں بچت اور سرمایہ کاری کی بہتر شرح، معیشت کی دستاویزات، ٹیکس دہندگان کی تعداد میں اضافہ اور دولت کی عدم مساوات کو کم کرنا شامل ہے۔ لہذا کیپٹل مارکیٹ کی ترقی حکومت کے بیان کردہ مقاصد کے ساتھ مکمل طور پر ہم آہنگ ہے۔

 فرخ خان نے مزید کہا کہ کیپٹل مارکیٹس کوئی رعایت یا سبسڈی نہیں مانگتی ہیں،ہم دیگر اثاثوں کی کلاسوں اور بڑے غیر رسمی شعبے کے مقابلے میں صرف ایک سطحی کھیل کا میدان چاہتے ہیں،اسے مسلسل ٹیکس اور اقتصادی پالیسیوں کے ساتھ ہمیں دیں،یہاں موجود تمام کیپٹل مارکیٹ اسٹیک ہولڈرز کی جانب سے میں یہ عہد کر سکتا ہوں کہ آپ کے تعاون سے  ہم پی ایس ایکس کو ایک اہم علاقائی مارکیٹ کے طور پر اس کے صحیح مقام تک پہنچائیں گے، جو پاکستان کی اقتصادی ترقی میں اپنا بھرپور کردار ادا کریں گے۔

پی ایس ایکس کی چیئرپرسن ڈاکٹر شمشاد اختر نے وفاقی وزیر خزانہ کا ان کے دورے پر شکریہ ادا کیا اور انہیں پی ایس ایکس میں ہونے والی حالیہ پیش رفت سے آگاہ کیا اور انہیں کیپٹل مارکیٹ اور معیشت کی بہتری کے لیے  پی ایس ایکس کے کچھ خدشات سے آگاہ کیا۔ چیئرپرسن پی ایس ایکس نے کہا کہ پی ایس ایکس نے ایک نئی حکمت عملی مرتب کی ہے جو اس سال شروع کی جائے گی،کچھ کلیدی اقدامات اٹھائے جائیں گے جو سرمایہ کاروں تک رسائی کو بڑھا کر ایکویٹی اور قرض کی فہرستوں اور اجرا کے ساتھ سپلائی سائیڈ کو متحرک کرنے کے ذریعے سپلائی سائیڈ دونوں کو بڑھانے کی راہ ہموار کریں گے۔

 ڈاکٹر شمشاد اختر نے مزید کہا کہ پی ایس ایکس کے پاس ایک مضبوط ریگولیٹری فریم ورک کے ساتھ اچھی حکمرانی کا ڈھانچہ ہے، حالیہ کامیابی آن سائٹ جوائنٹ انسپیکشن ہے جو کہ بروکریج کمیونٹی پر بوجھ کو کم کرے گی۔

 اس موقع پر، چیئرمین ایس ای سی پی عامر خان نے اظہار خیال کرتے ہوئے کہا کہ کیپٹل مارکیٹس مجموعی معیشت، کارپوریٹ سیکٹر اور سرمایہ کاروں کی فلاح و بہبود اور بچت اور سرمایہ کاری کی شرح کو بہتر بنانے میں بہت زیادہ کردار ادا کر سکتی ہیں۔