صدر آزاد کشمیر سردار مسعود خان کی او آئی سی رکن ممالک سے مقبوضہ وادی میں  بھارتی مظالم رکوانے کی اپیل

447

نیامے نائیجر،28نومبر(اے پی پی): آزاد جموں و کشمیر کے صدر سردار مسعود خان نے  اسلامی تعاون تنظیم کے رکن ممالک سے اپیل کی کہ وہ مداخلت کر کے کشمیریوں کو نسل کشی، ظالمانہ بھارتی نو آبادیاتی نظام اور انسانی تاریخ کے بد ترین اسلامو فوبیا سے بچائیں۔

نائیجر کے شہر نیامے میں جاری اسلامی وزرائے خارجہ کونسل کے دوسرے ورکنگ سیشن سے خطاب کرتے ہوئے سردار مسعود خان نے کہا کہ اسلامی تعاون تنظیم کشمیریوں کی نسل کشی بند کرانے کے لیے مداخلت کرے، کشمیری بد ترین اسلامو فوفیا ، ریاستی دہشت گردی اور نو آبادیاتی نظام سے لڑ رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ کشمیری پکار پکار کر کہہ رہے ہیں کہ ایک ارب اسی کروڑ مسلمانوں اور 57 اسلامی ملکوں میں سے کوئی نہیں جو ان کی مدد کو آئے۔

صدر سردار مسعود خان نے کہا کہ بھارت ایک  ظالم ملک ہے جو کشمیریوں کو تباہ کرنے پر تل گیا ہے،  کشمیریوں کو آزادی اور حق خود ارادیت مانگنے پر قتل کیا جا رہا ہے جبکہ نوجوانوں کو شہید، زخمی اور آنکھوں کی بصارت سے محروم کیا جا رہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ بیس ہزار کشمیری جیلوں اور حراستی کیمپوں میں بند ہیں جن کی زندگیاں خطرے میں ہیں۔

 صدرآزاد جموں و کشمیر  سردار مسعود خان نے کہا کہ مقبوضہ کشمیر میں انسانیت کے خلاف بڑےپیمانے پر جرائم جاری ہیں، مقبوضہ کشمیر کی ہر گلی، کوچے، بستی اور قریہ میں موت اور تباہی  کا  منظر پیش کر رہی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ بھارت ہندوستان بھرسے بھارتی شہریوں کو لا کر کشمیر میں غیر قانونی طور پر آباد کر رہا ہے، ایک مسلمان ریاست کو جبری طور پر ہندو ریاست میں تبدیل کیا جا رہا ہے۔

سردار مسعود خان نے کہا کہ بھارتی فوج مقبوضہ کشمیر میں آزادی پسند شہریوں کو قتل اور لائن آف کنٹرول پر آزاد کشمیر کے شہریوں کو اپنی جارحیت کا نشانہ بنا رہی ہے۔ آزاد کشمیر میں ہر روز بچے، خواتین اور بوڑھے بھارتی فوج کی گولیوں کا نشانہ بن رہے ہیں۔

انہوں نے مزید کہا کہ اسلامی تعاون تنظیم کئی عشروں سے مقبوضہ کشمیر میں انسانی حقوق کی خلاف ورزی پر احتجاج کر رہی ہے۔ جس پر کشمیری اسلامی تعاون تنظیم کے بے حد شکر گزار ہے۔